کار اور موٹر سائیکل لفٹنگ میں ملوث عناصر کو سخت سزائیں ملنی چاہئیں ، غلام نبی میمن

کار اور موٹر سائیکل لفٹنگ میں ملوث عناصر کو سخت سزائیں ملنی چاہئیں ، غلام نبی میمن

کراچی ( اے آئی اے ) کار اور موٹر سائیکل لفٹنگ میں ملوث عناصر کو سخت سزائیں ملنی چاہئیں ان خیالات کا اظہار ایڈیشنل آئی جی کراچی نے کار اور موٹر سائیکل لفٹنگ کے حوالے سے ہونے والے خصوصی اجلاس میں کیا اجلاس میں ڈی آئی جی سی آئی اے ، ڈی آئی جی ٹریفک ، چیف سی پی ایل سی بھی شریک تھے ایڈیشنل آئی جی کراچی غلام نبی میمن نے کہا کہ وہیکل کرائم کے لیے خصوصی قانون کا مسودہ تیار کرنے کا کہا ہے ، جیسے منشیات کے لیے خصوصی قانون ہے وہیکل کرائم کے لیے بھی ہونا چاہیے انہوں نے کہا کہ کار اور موٹرسائیکل لفٹنگ میں ملوث عناصر کو سخت سزائیں ملنی چاہئیں کم سزائیں ملنے سے ملزمان پھر وہی جرائم دہراتے ہیں انہوں نے کہا کہ اے وی ایل سی ٹریفک چالان افسر اور پارکنگ لفٹر آپریٹر سے بھی تفصیلات شیئرکرے تفتیشی افسران کے لیے فی کیس رقم بڑھانے کے لیے حکومت کو لکھا جائے گا، پولیس کے تمام ایس ایچ اوز اور ٹریفک ایس او اے وی ایل سی ایپ استعمال کریں گے ایس ایچ او اور ایس او ٹریفک کو چھینی یا چوری کی گئی گاڑیوں سے متعلق معلومات حاصل ہوں گی انہوں نے کہا کہ کراچی کے داخلی و خارجی راستوں پر نمبر پلیٹس کی پہچان کے لیے آٹومیٹک کیمرے لگانے پر غور کر رہے ہیں ، چوری کی گاڑی یا موٹر سائیکل کیمرے میں آتے ہی پکڑ سکیں گے ، ناردرن بائی پاس پر این ایچ اے کی جانب سے فینسنگ لگائی جائے گی فینسنگ لگانے سے کچے کے تمام راستے بند ہوجائیں گے راستے بند ہونے سے کار موٹر سائیکل لفٹنگ میں کمی آئے گی اجلاس میں ایس ایس پی اے وی ایل سی عارف اسلم راؤ نے بریفنگ دی، جس میں بتایا گیا کہ اے وی ایل سی نے 2 ماہ میں 35 گروہوں کا خاتمہ کیا، مختلف کارروائیوں میں 8 سو سے زائد ملزمان گرفتار کیے ، چوری یا چھینی گئی 8 سو 48 موٹرسائیکلیں ، 100 کاریں برآمد کرلی گئیں ہیں

About author