وزیراعظم پاکستان عمران خان کا کراچی کیلئے  1100 ارب روپے پیکج کا اعلان

وزیراعظم پاکستان عمران خان کا کراچی کیلئے 1100 ارب روپے پیکج کا اعلان

کراچی ( اے آئی اے ) وزیراعظم پاکستان عمران خان نے کراچی کیلئے 1100 ارب روپے کے پیکج کا اعلان کر دیا تفصیلات کے مطابق کراچی پیکیج پر وفاق اور سندھ حکومت کا اشتراک ہوگیا ہے وزیر اعظم عمران خان نے کراچی کے لیے 11 سو ارب روپے کے پیکج کااعلان کردیا ہے وزیراعلیٰ سندھ اور وفاقی وزراء کے ساتھ کراچی میں نیوز بریفنگ دیتے ہوئے وزیر اعظم عمران خان نے کہا کہ کراچی کے مسائل مستقل بنیادوں پر حل کریں گے ، سیوریج سسٹم مکمل طورپر ٹھیک کیا جائے گا ، سرکلرریلوے بحال کی جائی گے ، سالڈ ویسٹ منیجمنٹ کا مسئلہ بھی حل کریں گے بریفنگ سے قبل وزیراعظم عمران خان کی زیر صدارت کراچی کمیٹی کا اجلاس ہوا جس میں اسد عمر، شبلی فراز، علی زیدی اور امین الحق بھی شریک ہوئے اس کے علاوہ گورنر سندھ عمران اسماعیل اور وزیراعلی سندھ مراد علی شاہ بھی اجلاس میں شریک ہوئے وزیر وزیراعظم عمران خان نے کہا کسی بھی مسئلے سے نمٹنے کیلئے کوآرڈی نیشن ضروری ہے ، کراچی شہر کے مسائل کے حل کیلئے عملدرآمد کمیٹی بنائی ہے، تمام فیصلے صوبائی رابطہ عملدرآمد کمیٹی کے فورم پر ہوں گے عمران خان کا کہنا تھا کراچی کے لوگوں نے مشکل وقت کا سامنا کیا، کراچی والوں کیلئے پینے کا پانی بڑا مسئلہ ہے، نالے، نکاسی آب، بے گھر افراد، سالڈویسٹ کے مسائل ہیں، شہر قائد میں ٹرانسپورٹ کے ساتھ سڑکوں کا بھی مسئلہ ہے، این ڈی ایم اے نالوں سے تجاوزات کا خاتمہ کر رہی ہے، کراچی کی سڑکیں اور دیگر انفرا اسٹرکچر کا مسئلہ حل کرنا ضروری ہے، کراچی سرکلر ریلوے بھی مکمل کریں گے وزیراعظم عمران خان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کراچی کے مسائل کے حوالے سے تفصیلی گفتگو ہوئی ہے ، کراچی کے مسائل کو مستقل بنیادوں پر حل کریں گے ، کراچی میں بارشوں سے تباہی مچ گئی بارشوں سے بلوچستان اور دیگر اضلاع متاثر ہوئے ، سیلاب نے بلوچستان، اندرون سندھ اور سوات میں تباہی مچائی بارشوں سے پہلے کورونا کا چیلنج تھا، کورونا وائرس کے حوالےمرحلہ بہت مشکل تھا، کورونا سے نمٹنے کیلئے ہم نے کمیٹی بنائی، ٹڈی دل کے چیلنج سے نمٹنے کیلئے بھی کمیٹی تشکیل دی گئی وزیراعظم نے مزید کہا وزیراعلیٰ نے اندرون سندھ سیلاب کی تباہ کاریوں سے متعلق آگاہ کیا ، ہم نے مل کر کورونا سے نمٹنے کیلئے اقدامات کیے، کراچی کے مسائل کے حل کیلئے بھی مل کر کام کریں گے

About author